Masael Quetta

پاک افغان باڑ مکمل ہو جانے کے بعد ان مسائل میں کمی آئے گی: ضیاء لانگو

سمگلنگ کے خاتمہ سے صوبے کی  معیشت میں بہتری آئے گی اور مقامی لوگوں کو روزگار کے مواقع بھی فراہم ہونگے

1 487

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

پاک افغان باڑ مکمل ہو جانے کے بعد ان مسائل میں کمی آئے گی : ضیاء الانگو

- Advertisement -

کوئٹہ (مسائل نیوز ڈیسک ) صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے پاک افغان بارڈر پر واقع منقسم  گاؤں میں باڑ کی تنصیب اور متاثرہ آبادی کو معاوضے کی ادائیگی بارے منعقدہ اعلی سطح کے اجلاس کی صدارت کی اجلاس میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ  ارشدمجید،چمن ٹاسک فورس کمانڈر برگیڈیئر شعیب،سدرن کمانڈ آفس سے برگیڈئر واجد، ڈی آئی جی کوئٹہ اظہر اکرام، کمانڈنٹ چمن اسکاوٹس کرنل راشد، ڈپٹی کمشنر چمن جمعہ داد،اور متعلقہ حکام نے  شرکت کی  اجلاس کے شرکاء کو چمن ٹاسک فورس کمانڈر برگیڈیئر شعیب نے مالکان کو معاوضے کی رقم کی منتقلی،اور آئندہ کے لائحہ عمل  بارے  مکمل بریفنگ دی اور کہا کہ باڑ تنصیب کا پہلا فیز تقریباً مکمل ہوچکا ہے اور اس حوالے سے منقسم گاؤں کے مالکان کو  رقم کی ادائیگی بہت جلد کر دی جائے گی اس موقع پر وزیر داخلہ نے اجلاس کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاک افغان بارڈر پر فینسنگ مکمل ہونے کے بعد آمد و رفت اور تجارت کو منظم کرنے اور سمگلنگ کی روک تھام کے حوالے سے خاطر خواہ مدد ملے گی اور باڑ تنصیب مکمل ہونے سے امن،استحکام، تحفظ،سلامتی آئے گی  اور دہشتگردی کا خاتمہ ہو جائے گا  اور باڑ تنصیب سے افغانستان سے غیر قانونی آمدورفت بھی ختم ہو جائے گی کیونکہ افغان بارڈر سمگلروں کی جنت رہا ہے،سمگلنگ کے خاتمہ سے صوبے کی  معیشت میں بہتری آئے گی اور مقامی لوگوں کو روزگار کے مواقع بھی فراہم ہونگے انہوں نے کہا کہ افغان بارڈر کو جاننے والوں کو علم ہو گا کہ اس کو مکمل طور پرپورا کرنا کتنا مشکل اور بڑا کام ہے  یقینا پاک افغان باڑ مکمل ہو جانے کے بعد ان مسائل میں کمی آئے گی لیکن ان مسائل کے مکمل خاتمے کیلئے شہریوں   کی سوچ بدلنے کی ضرورت ہے کہ دنیا میں آزاد اور خود مختار ممالک ایک دوسرے کے بارڈرز، روایات اور سب سے بڑھ کر سفارتی و اخلاقی آداب کی پاسداری یقینی بناتے ہیں یہ امر یقینی ہے کہ پاک افغان بارڈر مینجمنٹ کے ثمرات جنوبی ایشیا بالخصوص پاکستان اور افغانستان کے لیے بہت جلد سامنے آئیں گے اور خطے میں امن و خوشحالی کا دور دورہ ہوگاانہوں نے مزید کہا کہ اتنے بڑے اور مشکل ترین بارڈر کو محفوظ بنانا بلاشبہ دنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا اور بڑا کارنامہ ہے اور باڑ کی تنصیب سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ صوبائی حکومت امن و امان کیلئے سنجیدہ ہے اور یہ اقدامات اس سنجیدگی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.