Masael Quetta

عمران ترین : ایوارڈ یافتہ ورسٹائل ایکٹر اور کمپیئر

0 119

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

عمران ترین : ایوارڈ یافتہ ورسٹائل ایکٹر اور کمپیئر

دسمبر 21 کی انتہائی سرد شام پشین “كلی ملکیار” سے تعلق رکھنے والے ایک معتبر اور قدامت پسند ترین گھرانے جِس کے سرکردہ شخصیت “مَلک اختر محمّد ترین” تھے، کے گھر پیدا ہونے والے عمران اختر ترین جنہیں سب “عمران ترین” کے نام سے جانتے ہیں، اپنے کیریئر کا آغاز 1996 میں ریڈیو پاکستان کوئٹہ سے نشر ہونے والے ڈرامے ’جشنِ تمثیل‘ سے کیا۔
اور ٹیلی ویژن سکرین پر پہلی مرتبہ 1997 کی مشہور ڈراما سیریل “واپسی” میں متعارف ہوئے۔
جبکہ تکنیکی بُنیاد پر اِن کا پہلا ڈراما سیریل (محافظ) تھا، جسے مشہور اداکار ، رائٹر اور ڈائریکٹر “عاشر عظیم” نے لکھا اور ہدایات دیں تھیں۔ مگر کُچھ وجوہات کی بناء سیریل سکرین تک نہ پہنچ سکی۔
ڈرامے کے کردار کیلئے باقاعدہ طور سے “عاشر عظیم” نے اِن کا آڈیشن لیا تھا۔ اِس کے بعد اِن کو مرکزی کردار کیلئے منتخب کیا گیا۔

ابتدائی پرائمری تعلیم مکران ڈویژن کے پسماندہ علاقے “تمپ” سے اُردو اور بلوچی زبان میں حاصل کی، اِس کے بعد مڈل تعمیرِ نو سکول ، ایف ۔جی پبلک سکول اور میٹرک اسلامیہ ہائی سکول، کوئٹہ سے کرنے کے بعد عمران ترین نے بین الاقوامی تعلقات عامہ (IR) میں ماسٹر ڈگری اور بلوچستان یونیورسٹی کوئٹہ سے بیچلر آف لاء (LL.B) کی ڈگری حاصل کی۔
اس کے علاوہ بلوچستان آرٹس کونسل کوئٹہ سے فوٹوگرافی میں بھی ماسٹر ڈپلومہ حاصل کرنے والے پہلے طالب علم ہیں۔

شوبز کے کیریئر کا آغاز 1996 میں “ریڈیو پاکستان کوئٹہ” سے کیا، اور جلد ہی اپنی خُدا داد صلاحیتوں ، انتھک محنت اور (بیری ٹون) آواز کی بدولت ایک بہترین ورسٹائل ریڈیو ڈرامہ آرٹسٹ اور کمپیئر/ڈی جے کی حیثیت سے اپنی پہچان کاروائی۔

1997 میں پاکستان ٹیلی ویژن کوئٹہ سینٹر کی اُردو ڈرامہ سیریل “واپسی” سے بطورِ مرکزی اداکار کام کا آغاز کیا، بعد ازاں فلمی سفر کی ابتداء اِنہوں نے مشہور فلم “عبداللّہ (دی فائنل وٹنس) میں “ASP علی” کا کردار ادا کر کے کیا۔

عمران ترین کی پہلی فلم “عبداللّہ (دی فائنل وٹنس) اُس سال کی واحد پاکستانی فیچر فلم تھی جسے پاکستان سے 68ویں سالانہ “کانز فلم فیسٹیول” فرانس 2015 میں نمائش کے لیے منتخب کیا گیا۔
فلم کی عوامی پذیرائی کو دیکھتے ہوئے مشہور ویب سٹریمنگ سائٹ “Netflix” نے اس کے حقوق خریدے۔
اِس کے بعد ایک بار پھر باکس آفس پر کامیابی نے اِن کے قدم چومے ، اِس بار سچے حالات و واقعات پر مبنی فلم “ریوینج (آف دی ورتھ لیس) میں اِنہوں نے اپنی جاندار اداکاری سے نہ صرف دیکھنے والوں کے دِل جیتے بلکے فلمی ناقدین نے بھی ان کے کام کو خوب سراہا۔ فلم میں اِنہوں نے “جانان خان” کے کردار کو بخوبی نبھایا جو بیک وقت مثبت اور منفی دونوں شیڈز لیے ایک مشکل چیلنج تھا۔
جو یہ فلم سینما کے پردے پے دیکھ نہیں پائے وہ اب اسے مشہور ویب سٹریمنگ سائٹ “Vidly tv” پر دیکھ سکتے ہیں۔

فلم کے شعبے میں گہری دلچسپی کے باعث ، جدت اور مہارت سے ایک بار پھر نہ صرف ناقدین بلکہ ہالی وڈ کے اکیڈمی ایوارڈ یافتہ ڈائریکٹر (ٹیڈ براؤن) اور ایمی ایوارڈ یافتہ (مارلن ایگریلو) سے بھی خاص داد و تحسین حاصل کی جو کہ نہ صرف اِن کے اساتذہ بلکہ، امریکن فلم شو کیس (AFS) اور (USC) اسکول آف سنیمیٹک آرٹس کے تحت “فلم میکنگ اور ڈائریکشن ورک شاپ (دی آرٹ آف سنیمیٹک سٹوری ٹیلنگ) کی جیوری کے ججز بھی تھے۔
فلم میکنگ کے اِس کورس میں انہیں پہلی پوزیشن حاصل ہوئی، اِس پورے ٹریننگ ورکشاپ کو منعقد کرنے کیلئے خصوصی تعاون امریکن ایمبیسی کے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ اور معاون پارٹنرز، انٹرنیشنل ڈاکیومینٹری ایسوسی ایشن (IDA) کا تھا۔

2022 میں اِن کے فنکارانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے انہیں پاکستانی نژاد ہالی ووڈ کے معروف پروڈیوسر “حبیب پراچہ” کی آنے والی فلم “بیریئر (دی مووی) میں جمال کا منفرد منفی کردار دیا گیا۔ جسے بیک وقت ہالی ووڈ (امریکا) اور پاکستان کے علاوہ دیگر ممالک میں بھی نمائش کے لئے پیش کیا جائے گا۔

بطورِ کمپیئر ، رائٹر اور ہوسٹ ابتک 100 سے زائد قومی اور بین الاقوامی سطح کے لائیو شوز کر چُکے ہیں۔

جنکی تفصیل کُچھ يوں ہے؛

پہلا ایف سی بلوچستان “یومِ شہدا” شو ،

ایف سی بلوچستان “آل پاکستان رمضان T20 کرکٹ کپ” جِس میں انٹرنیشنل کھلاڑی بھی شامل تھے، کا افتتاحی اور اختتامی شو۔

- Advertisement -

کئی مُختلف “23 مارچ قائداعظم ریذیڈنسی” شوز ۔

جِن میں مدعو معزز شخصیات ، کمانڈر سَدرن کمانڈ XII کور (پاکستان) ، انسپکٹر جنرل فرنٹیئر کور بلوچستان ، گورنر بلوچستان، سینیٹ آف پاکستان کے سینیٹرز ، کابینہ ڈویژن کے وزراء اور وزیراعلیٰ بلوچستان۔

اِس کے ساتھ ساتھ “صدر جنرل پرویز مشرف” کے 2002 کا “پاکستانی ریفرنڈم” شو اور “پی ٹی وی” کے کئی لائیو ، ایوارڈ اور میوزیکل نائٹ شوز بھی شامل ہیں۔

ڈراما سیریلز جِن میں انہوں نے مرکزی کردار ادا کیے؛

* 1997 میں “واپسی” بطور DSP عمران، Ptv کی پیشکش تھی۔
* 1999 میں “واپسی کے بعد” بطور شاہ جہاں لالہ، Ptv کی پیشکش تھی۔
* 1999 میں “ونڈا” بطور گُل، Ptv بولان کی پیشکش تھی۔
* 2000 میں “سنگ زاد” بطور کول مائن انسپکٹر، Ptv ہوم کی پیشکش تھی۔
* “سوزالے المر” 2001 میں بطور اُمید خان، Ptv بولان کی پیشکش تھی۔
* 2002 سعادت حسن منٹو کے مشہور افسانے “ہتک” میں حوالدار مادھو لال کا کردار کیا یہ Indus Vision کی پیشکش تھی۔
* 2003 میں “جلتا سمندر” ARY ڈیجیٹل کی پیشکش تھی، کردار زامُران، کے طور پر۔
* 2005 “گل بشرا” میں بطور افغان پٹھان شہزادہ، Ptv کی پیشکش تھی۔
* 2006 “سٹیشن آو ٹینشن” میں بطور لیلی کترینہ، Avt خیبر کی پیشکش تھی۔
* 2007 کمند میں بطور علی، Ptv ہوم کی پیشکش تھی۔
* 2008 “لیاری ایکسپریس” Ptv ہوم سے، صاحب جی کے کردار میں۔
* 2009 میں “مُسافت” بطور شَہیر، Ptvہوم کی پیشکش تھی۔
* 2010 میں “امن” بطور زینل، Ptv ہوم کی پیشکش تھی۔
* 2011 میں “کوئٹہ” بطور نورل، Atv خیبر کی پیشکش تھی۔
* 2012 میں “آس” بطور مَروان، Ptv ہوم کی پیشکش تھی۔
* 2013 میں Avt خيبر سے “بے بنگڑو لاسونہ” بطور جانان، کردار ادا کیا۔
* 2014 میں”جان ہتیلی پے” بطور اسماعیل، Ptv ہوم اور Urdu ون کی پیشکش تھی۔
* 2014 میں “مورکئی” بطور عمر خان، Ptv بولان کی پیشکش تھی۔
* 2015 میں “سرباز” بطور کیپٹن دانش، Avt خیبر کی پیشکش تھی۔
* 2015 میں “نگہبان” بطور شاہجہان، Ptv ہوم اور ایکسپریس انٹرٹینمنٹ کی پیشکش تھی۔
* 2016 میں “چِنار” بطور وطن خان، Ptv بولان کی پیشکش تھی۔
* 2017 میں “عید ہلچل” Ptv ہوم کی پیشکش، بطور علی کے۔
* 2018 میں “چاند چاندنی اور چاند رات” بطور چندو، Ptv ہوم کی پیشکش تھی۔
* 2019 میں “فرار” بطور جمال، Tv ون کی پیشکش تھی۔
* 2022 میں “یہ شادی ہو سکتی ہے” Ptv ہوم کی پیشکش تھی، بطور ارسلان۔
* 2023 میں “ہزار بخت” Ptv ہوم کی پیشکش، بطور وڈیرا جلال۔

ایوارڈز جو ابتک اِن کے حصے میں آۓ؛

(نامزدگی) بہترین کمپیئر کی کیٹیگری میں “23 مارچ شو” سے 15ویں PTV ایوارڈز میں ۔

(نامزدگی) بہترین کمپیئر کی کیٹیگری میں دُوسری بار “میگا عید شو” سے 16ویں PTV ایوارڈز میں۔

(فاتح) بہترین کمپیئر کی کیٹیگری میں تیسری بار نامزدگی اور فتح “آزادی شو” سے 17ویں PTV ایوارڈز میں۔

(فاتح) بہترین اداکار (میل) “شانِ پاکستان” (CM بلوچستان ایوارڈز) 2023 میں۔

شوبز سے وابسطہ ہونے کے باوجود “عمران اختر ترین” عُرف “عمران ترین” نے اپنی تعلیم جاری رکھی، بین الاقوامی تعلقات عامہ میں ماسٹرز اور ایل ایل بی کے ساتھ ساتھ فوٹو گرافی میں ماسٹر ڈپلومہ حاصل کرنے سمیت “یو ایس سی سکول آف سینیمیٹک آرٹس (امریکہ)” کی فلم میکنگ سے متعلق ورکشاپ میں پہلی پوزیشن حاصل کر چُکے ہیں۔

ہم اِن کے بہترین مستقبل اور آنے والے پروجیکٹس کیلئے دعاگو ہیں، آپ یونہی مسکراتے رہیں، اپنا اور مُلک کا نام روشن کرتے رہیں، اللّٰہ ہمیشہ آپ پر مہربان رہے خوشیاں اور ترقیاں دے خیر سے۔ آمین

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.