Masael Quetta

خود کی پہچان

0 325

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

از قلم: سید نورآغا

‏کستوری، دنیا کی مہنگی ترین خوشبو ہے اور کستوری کی جائے تولید ہرن کی ناف ہے جس ہرن کی ناف میں یہ کستوری بنتی ہے وہ خود اس خوشبو کو سونگھ کر مسحور ہو جاتا ہے اور شنید ہے کہ بعد از طعام ہرن اپنا تمام وقت اس کستوری کو کھوجنے میں صحرا میں بھٹکتا رہتا ہے مگر اس چیز سے لا علم رہتا ہے ‏کہ وہ خوشبو اس کی اپنی ناف میں سے آرہی ہے۔

ہرن کی لا علمی پر آپ یقینا ہنسیں یہ آپ کا حق ہے مگر خدا نے ایسا کام صرف ہرن کیساتھ ہی نہیں کر رکھا، بلکہ گھوڑا وہ طاقت ہے جو طاقت کو ناپنے کا بھی معیار ہے، یہ موٹر اتنے ہارس پاور کی ہے یہ تو سن رکھا ہو گا آپ نے مگر روایت ہے کہ ‏بروز قیامت گھوڑے کو پتہ چلے گا کہ اس کے پاس کتنی طاقت تھی؟

- Advertisement -

آپ گھوڑے پر بھی ہنسنے میں حق بجانب ہیں مگر ایسا کام صرف گھوڑے کیساتھ بھی نہیں آپ کیساتھ بھی ہے اور میرے ساتھ بھی، کیونکہ حدیث سرور دو عالم صلى الله عليه وآله وسلم ہے

“جس نے اپنے آپ کو پا لیا، اس نے اپنے رب کو پا لیا”

مگر خود تک کی رسائی اور معرفت نہ مجھے ہے اور نہ آپ کو…. باقی اللہ پاک ہم کو اچھے عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.